You are currently viewing قبرستان کی مٹی خریدنا، قبرستان میں راستہ بنانا

قبرستان کی مٹی خریدنا، قبرستان میں راستہ بنانا

قبرستان کی مٹی خریدنا

سوال: کیا فرماتے ہیں علماء کرام مسئلہ ذیل کے بارے میں:

قبرستان کی زمین پر راستہ بن رہا ہے جس کی وجہ سے اس کی مٹی نکالی جارہی ہے اس مٹی کو ایک آدمی خرید کر اپنے گھر میں استعمال کررہا ہے تو آیا اس کا استعمال کرنا جائز ہے یا نہیں؟

المستفتی: کلیم احمد شیروانی۔

الجواب باسم الملھم للصدق والصواب:

 صورت مسئولہ میں اگر مٹی بیچنے سے قبرستان کا کوئی نقصان نہیں ہے اور مٹی کی فروخت سے آنے والی آمدنی کو قبرستان میں استعمال کیا جائے گا تو اس کو خریدنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ واللہ اعلم بالصواب۔

الدلائل

سئل نجم الدين في مقبرة فيها أشجار هل يجوز صرفها إلى عمارة المسجد؟ قال: نعم، إن لم تكن وقفا على وجه آخر قيل له: فإن تداعت حيطان المقبرة إلى خراب يصرف إليها أو إلى المسجد قال: إلى ما هي وقف عليه إن عرف (الفتاوى الهندية، کتاب الوقف، قبیل الباب الثالث عشر في الأوقاف التي يستغنی عنها، زکریا قدیم 2/476، جدید 2/418)

والله أعلم

تاريخ الرقم: 7- 6- 1441ھ 2- 2- 2020م الأحد.

المصدر: آن لائن إسلام

Join our list

Subscribe to our mailing list and get interesting stuff and updates to your email inbox.

Thank you for subscribing.

Something went wrong.

Leave a Reply